تازہ ترین
وطن کی مٹی عظیم ہے تو ۔۔۔ عظیم تر ہم بنا رہے ہیں:اٹلی کے شہر بولزانو میں اسلامی جمہوریہ پاکستان کے 70 ویں یومِ آزادی کی شاندار اور رنگا رنگ تقریب پورے تزک و ا حتشام سے منائی گئی، پاکستانی کمیونٹی بولزانو وطن سے اظہارِ محبت کیلئے جوق در جوق کولپنگ ہاؤس پہنچ گئی،ہر زبان پر ’سب سے پہلے پاکستان کا نعرہ، پاکستان کی خاطر تن من دھن قربان کا عزم: رپورٹ، بلال حسین جنجوعہ         ساؤتھ افریقہ: پاکستان ساؤتھ افریقہ ایسوسی ایشن کی جانب سے پاکستان کے سترویں یومِ آزادی کی تقریب کو شایانِ شان انداز سے منایا گیا، چیف کوارڈینیٹر مسلم لیگ نون یورپ حافظ امیر علی اعوان کی خصوصی شرکت         مسلم لیگ ن آزاد کشمیر سپین کے صدر راجہ گلفراز ایڈووکیٹ اور سردار اکرم نائب صدر ن لیگ آزاد کشمیر سپین کی طرف سے ملک محمد حنیف صدر مسلم لیگ ن آزاد کشمیر یوتھ ونگ کے اعزاز میں ھمالیہ ریسٹورنٹ میں عشائیہ         فرانس: استاد آصف سنتو خان اور ہمنواؤں کا شاندار قوالی پروگرام، کمیونٹی و قوالی شائقین کی کثیر تعداد میں شرکت         یو،کے: امام اعظم ابو حنیفہ ؒ کی دین اسلام کے لیے گراں قدر خدما ت کو تا قیام قیامت یا د رکھا جا ئے گا         یو،کے: امام اعظم ابو حنیفہ ؒ کی تعلیما ت قرآن و سنت کو سمجھنے میں مددگا ر ثا بت ہوتی ہیں، اہل سنت و الجما عت برطانیہ         پاکستانی کمیونٹی کوریانے تھیگو میں سجایا پاکستان کی 70ویں یوم آزادی پاکستان کا عظیم میلہ         سٹاک ہوم: پاکستان میلہ کمیٹی سویڈن کے زیر اہتمام سالانہ جشن آزادی میلہ،سموسے، پکوڑے، رس ملائی، بریانی، حلیم اور کشمیری چائے کی مسحور کن خوشبو اور لذت سے سویڈش و دیگر ممالک کے باشندے بھی جھوم اٹھے         پاکستانی اور برطانوی اداروں کے مابین تربیتی ورکشاپس، ہمارے نظام حکومت کو بہتر بنائیں گی، چیف جسٹس آزادکشمیر پاکستانی اداروں کا موازنہ برطانوی اداروں سے کرنا درست نہیں، ہمیں سیکھنے کی ضرورت ہے۔ چوھدری ابراہیم ضیاء چیف جسٹس چوھدری ابراہیم ضیاء کی اولڈہم مئیرز پارلر میں کمیونٹی سے ملاقات، باہمی دلچسپی کے امور پر گفتگو         برطانیہ میں نسلی تعصب، پاکستانی اداکارہ کو ہوٹل سے نکال دیا گیا         ملک عبدالوحید کے والد کا انتقال،پی ٹی آئی بولونیا کے رہنما پاکستان روانہ، مرحوم ملک عبدالقیوم کی نماز جنازہ آج ادا کی جائے گی،         فرانس: پیرس ادبی فورم کے زیرِ اہتمام تیسرا عالمی مشاعرہ میں شریک شعرا، شاعرات و آرگنائزر خواتین         سپین میں مقیم مسیحی کمیونٹی نے شمع جلا کر بارسلونا میں ہونے والی دہشتگردی کا شکار ہونےوالی فیملی سے اظہار یکجہتی کیا         اٹلی: مسلم لیگ نون اٹلی کے صدر خالد محمود گوندل کی سربراہی میں پاکستان کے سترویں یومِ آزادی کے حوالے سے روریتو سٹی میں تقریب کا اہتمام کیا گیا         سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نیو جرسی (امریکہ )میںپاکستان کے 70واں جشن آزادی مارچ میں کمیونٹی کیساتھ شامل        

آستین کا سانپ بننا

آستین کا سانپ بننا

بہت دن پہلے کی بات ہے ملک یونان پر ایک بادشاہ حکومت کرتا تھا۔بادشاہ اپنے سب ہی وزیروں پر بھروسہ کرتا لیکن ان میں ایک وزیر جس کا نام فیصل تھا اسے بادشاہ بہت پسند کرتا اور حکومتی معاملے میں فیصل سے اکثر مشورے لیا کرتا۔فیصل کی نیت کا بادشاہ کو ہرگز علم نہیں تھا۔وہ اس پر بہت اعتماد کرتا جبکہ فیصل کسی نہ کسی طرح بادشاہ کی حکومت کا تختہ گر ا کر خود بادشاہ بننا چاہتا تھا۔

اطہر اقبال:
بہت دن پہلے کی بات ہے ملک یونان پر ایک بادشاہ حکومت کرتا تھا۔بادشاہ اپنے سب ہی وزیروں پر بھروسہ کرتا لیکن ان میں ایک وزیر جس کا نام فیصل تھا اسے بادشاہ بہت پسند کرتا اور حکومتی معاملے میں فیصل سے اکثر مشورے لیا کرتا۔فیصل کی نیت کا بادشاہ کو ہرگز علم نہیں تھا۔وہ اس پر بہت اعتماد کرتا جبکہ فیصل کسی نہ کسی طرح بادشاہ کی حکومت کا تختہ گر ا کر خود بادشاہ بننا چاہتا تھا۔
دن یوں ہی گزرتے گئے۔وزیر فیصل نے اپنے ساتھ کچھ اور وزیروں کو بھی ملا لیا اور انہیں ساتھ دینے پر انعام کا لالچ بھی دیا۔بہت سے وزیر انعام و اکرام کے لالچ میں فیصل سے مل گئے اور پھر ایک دن فیصل نے بادشاہ کوختم کرنے کا ایک منصوبہ بھی بنا لیا۔ہوایوں کہ بادشاہ اپنی رعایا کا حال معلوم کرنے کے لئے اپنے وزیروں کے ساتھ ایک قافلے کی صورت میں باہر نکلا تووزیر فیصل نے بادشاہ سے کہا۔”قریب ہی جنگل میں بہت نایاب تیتر آئے ہوئے ہیں،کیوں نہ ان کا شکار کیا جائے۔“بادشاہ تیتروں کا بہت شوقین تھا لہذااس نے حامی بھر لی اور پھر یہ سب جنگل میں تیتروں کا شکار کھیلنے نکل پڑے۔جنگل بڑا خطرناک تھا۔یہاں جنگلی جانور گھومتے رہتے تھے۔فیصل وزیر نے انتہائی چلاکی سے بادشاہ کو جنگل میں اکیلا چھوڑ دیا اور خود باقی وزیروں کے ساتھ محل واپس آگیا۔اور یہ اعلان کرایا کہ۔”بادشاہ سلامت کو جنگل میں شیر نے کھا لیا ہے،بادشاہ سلامت سے چونکہ میں زیادہ قریب تھا لہذا آج سے میں بادشاہ ہوں“کچھ دوسرے وزیر جو بادشاہ کے وفادار تھے افسوس کرنے لگے اور مجبوراََ انہوں نے فیصل کو ہی اپنا بادشاہ تسلیم کر لیا۔کچھ دن یوں ہی گزر گئے ایک دن اصل بادشاہ انتہائی خستہ حالت میں اپنے محل تک آپہنچا اب جو وزیروں نے دیکھا کہ بادشاہ تو زندہ ہے۔تو ان کی گھِگی بندھ گئی جبکہ بادشاہ کے وفادار وزیر خوش ہوئے۔بادشاہ نے کہا کہ”مجھے فیصل اور اس کے ساتھی وزیر مرنے کے لئے مجھے جنگل میں چھوڑ آئے تھے اور انہیں یقین تھا کہ مجھے کوئی جانور وغیرہ کھا گیاہوگا لیکن جب تک میری زندگی اللہ نہ لکھی ہے مجھے کچھ نہیں ہوسکتا۔میں نے فیصل پر سب سے زیادہ اعتماد کیا یہی”آستین کا سانپ نکلا۔“یہ کہہ کر بادشاہ نے فیصل وزیر کو اس کے دیگر ساتھیوں کے ساتھ قید کروا دیا۔

Related posts