سوال گندم ، جواب چنا !

سوال گندم ، جواب  چنا !

چیخیں نکلوا دیں مودی نے جموں پر ترنگا لہرا کر، رہی سہی کسر پہلے یو ا ے ای اور پھر بحرین نے گجرات کے قصاب کو اعلیٰ سرکاری ایوارڈز سے نواز کر پوری کردی!

دنیا کی طرف سے مذمت کے انتظار میں جلی بھنی قوم تھک ہار کر سوال کرتی ہے کہ انڈیا کشمیر کو نگل رہا ہے تو سفارتکاری کے شہسواروں کی جانب سے جواب ملتا ہے بھارت جارحیت کر کے تو دیکھے اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے۔ عجب مخمصے کی کیفیت ہے۔

ہم ان کو اپنی وفا کا حساب کیا دیتے
سوال سارے غلط تھے جواب کیا دیتے

پاک بھارت جنگوں میں نہ پہلے کوئی ہماری مدد کو آیا نہ اب آتا نظر آتا ہے تو پھر ہم کس آس پر ہاتھ پہ ہاتھ دھرے بیٹھے ہیں، آخر ہماری حکمتِ عملی کیا ہے؟ جنگ تو واقعی کسی مسئلے کا حل نہیں، لیکن اب جبکہ ہم نے بھارت سے مزاکرات بھی نہ کرنے کی ٹھانی ہے تو پھر ’کشمیر بنے گا پاکستان‘ کا نعرہ لگانا چہ معنی؟ کرفیو اٹھنے کے انتظار میں بیسواں روز تو گزر گیا، کوئی یہ بھی تو بتائے کہ جب کبھی لاک ڈاؤن ٹوٹے گا تو کون سی رانی توپ چلے گی؟

انڈین آرمی کے مقبوضہ کشمیر پر قبضے کے فوری بعد پاکستان کی شمالی پٹی پر کئی دھماکے ہوئے، اندھی وارداتوں میں متعدد شہادتیں بھی ہوئیں،بھارت میں تو ایک پٹاخہ بھی نہ پھوٹا، بھارت نے اگر اپنے مسلح جتھوں کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے، تو ہم نے اپنے ’اثاثوں‘ کے ہاتھ پاؤں کیوں باندھ رکھے ہیں؟

آج کی دنیا رائے عامہ کو نہیں مانتی، عوامی رائے کی کوئی قدرو قیمت ہوتی تو جنگِ عراق ہوتی نہ بریگزیٹ، آج کی دنیا اسی فریق کا ساتھ دیتی ہے جس کا پلڑا بھاری ہو!

تحریر، وسیم رضا
(26.08.2019, Italy)

About The Author

Related posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *